برطانوی خاتون کا اماراتی وزیر پر جنسی استحصال کا الزام

ویب ڈیسک

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے وزیر برائے رواداری 69 سالہ شیخ نہیان بن مبارک النہیان نے 32 سالہ برطانوی خاتون کی جانب سے خود پر لگائے گئے جنسی استحصال کے الزامات پر تعجب کا اظہار کرتے ہوئے انہیں جھوٹا قرار دے دیا۔

0 0
Read Time:2 Minute, 24 Second

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے وزیر برائے رواداری 69 سالہ شیخ نہیان بن مبارک النہیان نے 32 سالہ برطانوی خاتون کی جانب سے خود پر لگائے گئے جنسی استحصال کے الزامات پر تعجب کا اظہار کرتے ہوئے انہیں جھوٹا قرار دے دیا۔

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق اماراتی وزیر اور ریاست ابوظہبی کے شاہی خاندان کے اہم ترین فرد شیخ نہیان بن مبارک النہیان پر 32 سالہ برطانوی خاتون کیٹلن مکنمارا نے حال ہی میں جنسی استحصال کے الزامات لگائے تھے۔

برطانوی خاتون نے حال ہی میں برطانوی اخبار دی ٹائمز کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں دعویٰ کیا تھا کہ اماراتی وزیر نے انہیں رواں سال فروری میں ایک نجی ملاقات کے دوران استحصال کا نشانہ بنایا۔

شیخ نہیان بن مبارک النہیان پر جنسی استحصال کا الزام لگانے والی خاتون برطانیہ کے معروف ادبی و ثقافتی فیسٹیول ’ہے‘ کی منتظم ہیں۔

کیٹلن مکنمارا ’ہے‘ فیسٹیول برطانیہ کے ان منتظمین میں شامل ہیں، جنہوں نے رواں برس فروری میں کورونا کی وبا سے قبل ابو ظہبی میں چار روزہ فیسٹیول کا کامیاب انعقاد کیا تھا۔

فروری 2020 میں نجی ملاقات کے دوران استحصال کا نشانہ بنایا گیا، برطانوی خاتون—فوٹو: دی ٹائمز

کیٹلن مکنمارا کے مطابق ابوظہبی میں ’ہے‘ فیسٹیول کی تیاریوں کے سلسلے میں ہی شیخ نہیان بن مبارک النہیان نے انہیں ایک جزیرے پر ملاقات کے لیے بلایا، جہاں انہیں جنسی استحصال کا نشانہ بنایا۔

خاتون نے مذکورہ الزامات برطانوی اخبار کو دیے گئے انٹرویو میں لگائے، جسے دنیا بھر کے نشریاتی اداروں نے اہم خبر کے طور پر شائع کیا اور انٹرویو کے بعد ہی شیخ نہیان بن مبارک النہیان کے برطانیہ میں موجود وکلا نے انٹرویو میں لگائے گئے الزامات کو جھوٹا قرار دیا۔

اماراتی وزیر کے وکلا کی جانب سے شیخ بن نہیان کے حوالے سے جاری کیے گئے بیان میں برطانوی خاتون کی جانب سے لگائے گئے الزامات پر تعجب کا اظہار کیا گیا اور کہا گیاکہ خاتون نے 8 ماہ بعد الزامات کو اخباری خبر کے ذریعے بیان کیا اور اس میں کوئی شک نہیں کہ وہ جھوٹے الزامات ہیں۔

مذکورہ معاملہ سامنے آنے کے بعد یو اے ای کی وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا کہ وزارت ذاتی معاملات پر بیان جاری نہیں کرتی۔

دوسری جانب برطانیہ کی میٹروپولیٹن پولیس نے تصدیق کی ہے کہ رواں برس جولائی میں خاتون نے ان سے ریپ کیے جانے کے حوالے سے رابطہ کیا تھا اور پولیس نے ان کا بیان ریکارڈ کرلیا تھا۔

’ہے‘ فیسٹیول انتظامیہ کی خاتون کی جانب سے اماراتی وزیر پر جنسی استحصال کے الزامات لگائے جانے کے بعد مذکورہ فیسٹیول کی اعلیٰ انتظامیہ نے بھی اپنی عہدیدار کا ساتھ دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ اب مذکورہ فیسٹیول دوبارہ ابو ظہبی میں منعقد نہیں کیا جائے گا۔

’ہے‘ فیسٹیول کا رواں برس فروری میں چار روزہ انعقاد شیخ نہیان بن مبارک النہیان کی جانب سے جاری کردہ فنڈز پر ہوا تھا، جس میں کئی اہم عالمی ادبی، سماجی و شوبز شخصیات شامل ہوئی تھیں۔

شیخ نہیان بن مبارک النہیان نے الزامات کو جھوٹا قرار دے دیا—فوٹو: اے پی
Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

شہزادہ ولیم کی پاکستانی طالبات کے سامنے بیوی کی تعریفیں

برطانوی شہزادہ ہیری اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن نے اکتوبر 2019 میں کیے گئے تاریخی پاکستانی دورے کو ایک سال مکمل ہونے پر پاکستانی اسکول کے بچوں اور اساتذہ سے بات کرکے دورے کی یادیں تازہ کردیں۔
royal-couple's-wSD