’نیٹ فلیکس‘ کا ’دی کراؤن‘ کو فکشن قرار دینے کا انتباہ جاری کرنے سے انکار

ویب ڈیسک
0 0
Read Time:3 Minute, 33 Second

امریکی ملٹی نیشنل اسٹریمنگ ویب سائٹ ’نیٹ فلیکس‘ نے برطانوی حکومت کا اپنی ویب سیریز ’دی کراؤن‘ کو فکشن قرار دینے کا مطالبہ مسترد کردیا۔

برطانوی حکومت نے چند دن قبل ’نیٹ فلیکس‘ سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ حال ہی میں ریلیز کی گئی ویب سیریز ’دی کراؤن‘ کے آغاز میں یہ انتباہ جاری کرے کہ مذکورہ سیریز حقیقی نہیں بلکہ اس کی کہانی فکشن پر مبنی ہے۔

برطانوی حکومت نے ’دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن پر یہ اعتراض کیا تھا اس کے آغاز میں ہی یہ انتباہ دیا جائے کہ سیریز کی کہانی فکشن پر مبنی ہے۔

دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن کو ’نیٹ فلیکس‘ پر گزشتہ ماہ 15 نومبر کو ریلیز کیا گیا تھا۔

اسی سیریز کے پہلے ہی تین سیزنز جاری کیے جا چکے ہیں تاہم ان سیزنز پر برطانوی حکومت نے کوئی بیان یا اعتراض نہیں کیا تھا لیکن سیریز کے چوتھے سیزن پر برطانوی حکومت نے اعتراض کیا تھا۔

ویب سیریز کے چوتھے سیزن کی تعریفیں کی جا رہی ہیں—اسکرین شاٹ/ یوٹیوب/ نیٹ فلیکس

چوتھے سیزن میں برطانوی شاہی خاندان کے متعدد نئے کردار دکھائے گئے ہیں، جن میں لیڈی ڈیانا، ان کے شوہر شہزادہ چارلس اور برطانیہ کی پہلی خاتون وزیر اعظم مارگریٹ تھیچر کا کردار بھی شامل ہے۔

مذکورہ سیریز کے ریلیز ہوتے ہی کئی شائقین نے اسے سیریز کے تمام سیزنز سے بہترین قرار دیا تھا اور دنیا بھر میں اس کی تعریفیں کی جا رہی ہیں۔

سیریز کی تعریفیں کیے جانے کے بعد ہی برطانیہ کے وزیر ثقافت اولیور ڈاؤڈن نے نیٹ فلیکس سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ ویب سیریز کے آغاز میں ہی انتباہ جاری کرے کہ مذکورہ سیریز کی کہانی حقیقی نہیں بلکہ فکشن پر مبنی ہے۔

اولیور ڈاؤڈن نےکہا تھا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ ’دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن کو شاندار طریقے سے فلمایا گیا ہے، تاہم اسے دیکھ کر نئی نسل کے لوگ غیر حقیقی باتوں کو حقیقت سمجھ بیٹھیں گے۔

انہوں نے دلیل دی تھی کہ جن لوگوں نے ’دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن میں دکھائے گئے واقعات کو آنکھوں سے نہیں دیکھا ہوگا، وہ ویب سیریز میں دکھائے گئے واقعات کو حقیقت سمجھ بیٹھیں گے۔

چوتھے سیزن میں برطانیہ کی پہلی خاتون وزیر اعظم مارگریٹ تھیچر کا کردار بھی دکھایا گیا ہے، جسے گلیان اینڈرسن نے ادا کیا ہے—اسکرین شاٹ/ یوٹیوب نیٹ فلیس

تاہم اب نیٹ فلیکس نے برطانوی حکومت کا مطالبہ مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ سیریز کے آغاز میں یہ انتباہ جاری نہیں کریں گے کہ ’دی کراؤن‘ کی کہانی غیر حقیقی ہے۔

خبر رساں ادارے رائٹرز نے اپنی رپورٹ میں برطانوی میڈیا کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ نیٹ فلیکس کی انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ انہوں نے ’دی کراؤن‘ کو ہمیشہ ایک ڈرامے کے طور پر پیش کیا اور سیریز کے چوتھے سیزن کو بھی وہ ماضی کی طرح پیش کر رہے ہیں۔

نیٹ فلیکس کے مطابق انہیں یقین ہے کہ شائقین بخوبی یہ جانتے ہیں کہ ’دی کراؤن‘ فکشن پر مبنی ایک تاریخی ڈراما ہے اور اس کے آغاز میں یہ انتباہ لگانے کی ضرورت نہیں ہے کہ مذکورہ ڈراما غیر حقیقی ہے۔

نیٹ فلیکس انتظامیہ نے واضح کیا کہ ڈرامے کے آغاز میں یہ انتباہ جاری کرنا غیر ضروری ہے کہ ’دی کراؤن‘ کی کہانی فکشن پر مبنی ہے۔ خیال رہے کہ سیریز کا چوتھا سیزن 15 نومبر 2020 کو ریلیز کیا گیا، جس میں 1977 سے لے کر 1988 تک کا دور دکھایا گیا ہے۔

چوتھے سیزن میں لیڈی ڈیانا کی شادی اور ان کا شہزادہ چارلس سے رومانس بھی دکھایا گیا ہے—اسکرین شاٹ/ یوٹیوب/ نیٹ فلیکس

چوتھے سیزن میں جہاں لیڈی ڈیانا کا کردار دکھایا گیا ہے، وہیں اس میں پہلی برطانوی خاتون وزیر اعظم مارگریٹ تھیچر سمیت کئی نئے کردار بھی دکھائے گئے ہیں۔

‘دی کراؤن‘ کو ابتدائی طور پر نومبر 2016 میں جاری کیا گیا تھا اور اس سیریز کے پہلے سیزن میں 1947 سے 1955 کا شاہی خاندان کا دور دکھایا گیا تھا۔

’دی کراؤن‘ سیریز کی مرکزی کہانی ملکہ برطانیہ ایلزبتھ دوئم کی زندگی پر مبنی ہے اور سیریز کا آغاز ہی ان کی جوانی، شادی اور تخت سنبھالنے سے ہوتا ہے۔

’دی کراؤن‘ کا دوسرا سیزن 2017 میں ریلیز کیا گیا تھا جس کی کہانی 1956 سے 1964 کے عرصے کے دوران گھومتی ہے۔

سیریز میں نہ صرف شاہی محل میں ہونے والی سازشوں اور معاشقوں کو دکھایا گیا بلکہ اس میں برطانوی شاہی خاندان کے دنیا بھر کی سیاست پر پڑنے والے اثرات کے اہم واقعات کو بھی دکھایا گیا تھا۔

’دی کراؤن‘ سیریز کا تیسرا سیزن نومبر 2019 میں ریلیز کیا گیا تھا اور اس میں 1964 سے 1977 کا دور دکھایا گیا تھا۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

راولپنڈی میں پی ڈی ایم ریلی کے بعد 150افراد کیخلاف مقدمہ درج

اولپنڈی: اپوزیشن کارکنوں کے خلاف حکومتی کارروائی کے خلاف پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی طرف سے جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کی کال پر احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ سوہنی دھرتی اخبار کی رپورٹ کے مطابق صدر کامران مارکیٹ میں جامع اسلامیہ مسجد کے سامنے مسلم لیگ […]
pdm-case-registered-wSD