ملک میں آئین کی بالادستی ہوتی تو وزیراعظم، وزیراعلیٰ سے حقیقت جاننے کی کوشش کرتا، شاہد خاقان

ویب ڈیسک

مسلم لیگ (ن) کے سینئر نائب صدر اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے سندھ پولیس کے سربراہ کے مبینہ اغوا اور آرمی چیف کی جانب سے انکوائری کی ہدایت پر بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر اس ملک میں آئین کی بالادستی ہوتی تو ملک کا وزیراعظم صوبے کے وزیراعلیٰ کو ٹیلی فون کرتا، ان سے حقیقت جاننے کی کوشش کرتا اور اسے حل کرتا۔

0 0
Read Time:3 Minute, 1 Second

مسلم لیگ (ن) کے سینئر نائب صدر اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے سندھ پولیس کے سربراہ کے مبینہ اغوا اور آرمی چیف کی جانب سے انکوائری کی ہدایت پر بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر اس ملک میں آئین کی بالادستی ہوتی تو ملک کا وزیراعظم صوبے کے وزیراعلیٰ کو ٹیلی فون کرتا، ان سے حقیقت جاننے کی کوشش کرتا اور اسے حل کرتا۔

اسلام آباد میں اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ یہ وفاق اور صوبے کے درمیان ٹکراؤ، آئین کو توڑنے اور ملک کے اندر انتشار پیدا کرنے کی بات ہے۔

یاد رہے کہ 18 اکتوبر کو کراچی میں اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے منعقدہ اجلاس میں شرکت کے لیے آئے ہوئے پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کے شوہر کیپٹن (ر) صفدر کو مزار قائد میں نعرے بازی کرنے پر علی الصبح ہوٹل سے گرفتار کیا گیا تھا۔

جس کے بعد یہ رپورٹس سامنے آئی تھیں کہ کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری کے لیے سندھ پولیس پر دباؤ ڈالا گیا اور اسی کو وجہ بناتے ہوئے گزشتہ روز پولیس کے متعدد افسران نے چھٹی کی درخواستیں دینی شروع کردی تھی۔

بعدازاں بلاول بھٹو نے آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی سے کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف مقدمے کے اندراج کے لیے پولیس پر دباؤ ڈالنے کا نوٹس لیتے ہوئے کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا جس پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کراچی واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے کور کمانڈر کراچی کو فوری طور پر انکوائری اور جلد از جلد رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ہم حکومت سندھ کے ساتھ ہیں اور اظہار یکجہتی کرتے ہیں، سندھ پولیس کے افسران نے جو اصولی اسٹینڈ لیا یہ ان کا حق تھا اور پی ڈی ایم کا احتجاج جارہی رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ اگر اس ملک میں آئین کی بالادستی ہوتی تو ملک کا وزیراعظم صوبے کے وزیراعلیٰ کو ٹیلی فون کرتا،ان سے حقیقت جاننے کی کوشش کرتا اور اسے حل کرتا۔

انہوں نے مزید کہا کہ دونوں وفاقی ادارے، پاکستان رینجرز اور انٹر سروسز انٹیلی جنس وزیراعظم کو رپورٹ کرتے ہیں جب وہاں سے کوئی بات نہیں بنی، معاملے کی تہہ تک پہنچے کی کوئی کوشش نہیں ہوئی تو پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پریس کانفرنس کرکے پاک فوج اور آئی ایس آئی کے سربراہ سے گزارش کی کہ ملک کے معاملات کہاں جارہے ہیں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں دیکھنا یہ ہے کہ ہم کس طرف جارہے ہیں،آئین کیا کہتا ہے، آج ملک کے وزیراعظم نے فوج کو بھی اپنی سیاست میں ملوث کردیا ہے، فوج کا اس معاملے میں کوئی اثر ہے نہ ہونا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ آج مصالحت کی کوشش چیف آف آرمی اسٹاف کررہے ہیں، بدنصیبی ہے کہ ملک کا وزیراعظم اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے وفاق کو صوبے سے ٹکرا رہا ہے جو بڑی تشویشناک بات ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ آج سندھ کا ہر شخص اپنے آپ کو غیر محفوظ سمجھتا ہے، جس ملک کے پولیس چیف کو رات کے 4 بجے اغوا کرلیا جائے اس ملک کے عوام، پولیس اور وفاق کے صوبے سے تعلقات کا کیا بنے گا۔

انہوں نے کہا کہ کیا کسی نے اس بارے میں سوچا ہے یا تشویش کا اظہار کیا ہے یا وزیراعظم نے کوئی تقریر یا بات کی یا وزرا جو پریس کانفرنس کرتے تھکتے نہیں انہوں نے کچھ کہا، کیا آپ کو ملک، وفاق یا صوبوں کی پرواہ نہیں ہے۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

عائشہ خان نے آخر کار بیٹی کی پہلی جھلک دکھادی

ماضی کی مشہور اداکارہ و ماڈل عائشہ خان نے جنہوں نے 2 برس قبل شوبز چھوڑنے کا اعلان کیا تھا، انہوں نے آخر کار اپنی بیٹی کی پہلی جھلک مداحوں کو دکھادی۔
ayesha-khan-wSD