ملتان جلسہ: پی ڈی ایم کارکنان رکاوٹیں ہٹا کر قاسم باغ میں داخل

ویب ڈیسک
0 0
Read Time:8 Minute, 14 Second

پاکستان میں کورونا وائرس کی دوسری لہر میں تیزی کے ساتھ ہی سیاسی ماحول بھی گرم ہے اور ملتان جلسے پر حکومت اور اپوزیشن کے آمنے سامنے آنے کے باوجود بالآخر اب پی ڈی ایم کارکنان رکاوٹیں ہٹا کر جلسہ گاہ قلعہ کہنہ قاسم باغ اسٹیڈیم میں داخل ہوگئے ہیں۔

واضح رہے کہ حکومت نے کورونا کیسز میں اضافے کے پیش نظر اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کو ملتان کے قلعہ کہنہ قاسم باغ اسٹیڈیم میں جلسے کی اجازت نہیں دی تھی لیکن پی ڈی ایم جماعتیں ہر حال میں جلسے کرنے پر بضد تھی اور انہوں نے واضح کیا تھا کہ چاہے اسٹیڈیم میں ہو یا کسی سڑک پر لیکن ملتان میں جلسہ ہوگا۔

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ اب تک گوجرانوالہ، کراچی، کوئٹہ اور پشاور میں جلسے کرچکی ہے جبکہ آج 30 نومبر کو ملتان میں جلسہ کر رہی ہے۔

جے یو آئی کے کارکنان کی بڑی تعداد بھی جلسہ گاہ پہنچ گیا—اسکرین شاٹ

جلسے سے قبل ہی انتظامیہ کی جانب سے حکومتی رٹ قائم کرنے کے لیے قلعہ کہنہ قاسم باغ کا کنٹرول سنبھال لیا گیا تھا اور اسٹیڈیم کے اطراف کنٹینرز لگا کر راستے بند کردیے گئے تھے۔

تاہم بعد ازاں انتظامیہ کی جانب سے گھنٹہ گھر چوک پر کچھ رکاوٹیں ہٹائی گئی تھی تاہم اب اپوزیشن جماعتوں کے کارکنان قلعہ کہنہ قاسم باغ کے اطراف لگی رکاوٹوں کو ہٹا کر اسٹیڈیم میں داخل ہوگئے۔

پی ڈی ایم کارکنان کی بڑی تعداد کو دیکھتے ہوئے انتظامیہ کی جانب سے بھی اسٹیڈیم کے دروازے کھولنے کا حکم دے دیا گیا، اس کے ساتھ ساتھ بجلی کی بحالی کے احکامات بھی جاری کردیے گئے ہیں۔

وہیں مختلف جماعتوں کے کارکن اپنی اپنی جماعتوں کے جھنڈے اٹھائے چوک گھنٹہ گھر پہنچ رہے ہیں جہاں سے وہ بغیر کسی روکاٹ کے جلسہ گاہ کی طرف جا رہے ہیں۔

مسلم لیگ (ن) کے کارکنان کی بڑی تعداد بھی موجود ہے—اسکرین شاٹ

خیال رہے کہ اس سے قبل ملتان میں گھنٹہ گھر چوک کے راستوں کو بھی رکاوٹیں کھڑی کرکے بند کیا گیا تھا جبکہ وہاں پولیس کی بھاری نفری بھی تعینات تھی، مزید یہ کہ گیلانی ہاؤس کو جانے والے راستوں پر بھی رکاوٹیں لگائی گئی تھیں۔

اس کے ساتھ ساتھ ملتان شہر کے تمام داخلی راستوں پر بھی پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی وہی خواتین رہنماؤں سمیت سیاسی خواتین کارکنان کی موجودگی کے پیش نظر خواتین پولیس کی بھی بڑی تعداد گھنٹہ گھر چوک پر موجود ہے۔

گھنٹہ گھر چوک پر تعینات پولیس اہلکاروں کے پاس آنسو گیس کے شیل اور ربڑ کی گولیاں بھی موجود تھیں۔

شہر میں میٹرو اور اسپیڈو بس سروس کو بھی معطل کیا گیا تھا جبکہ انتظامیہ کی جانب سے شہر کے مختلف علاقوں میں موبائل فون سروس کو بھی معطل کیا گیا تھا جس سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

کارکنان کی بڑی تعداد جلسہ گاہ کے اطراف موجود نظر آرہی ہے—اسکرین شاٹ

اس حوالے سے انتظامیہ کا کہنا تھا کہ شام تک موبائل سروس کو دوبارہ بحال کردیا جائے گا۔

آصفہ بھٹو کی ملتان جلسے سے سیاست میں اینٹری

آج کے جلسے کی ایک خاص بات یہ بھی ہے کہ اس میں پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کی چھوٹی صاحبزادی آصفہ بھٹو زرداری بھی شریک ہوں گی جسے ان کے سیاسی کیریئر کا آغاز سمجھا جارہا ہے۔

آصفہ بھٹو زرداری نے پیپلزپارٹی کی ریلی کی قیادت کی—تصویر: سوشل میڈیا

جلسے میں شرکت کے لیے آصفہ بھٹو زرداری ملتان ایئرپورٹ پہنچیں جہاں آصفہ بھٹو زرداری کا استقبال ایم پی اے علی حیدر گیلانی اور ان کی بہن نے کیا۔

بعد ازاں وہ ملتان میں گیلانی ہاؤس پہنچی جس کے بعد ان کی قیادت میں پیپلز پارٹی کی ریلی کا آغاز گیلانی ہاؤس سے ہوا۔

اس موقع پر آصفہ بھٹو زرداری نے کارکنان سے خطاب میں ‘چلو چلو جلسہ گاہ چلو‘ کا نعرہ لگایا اور کہا کہ میرا یہی پیغام ہے۔

وہیں بلاول بھٹو زرداری نے یہ پیغام دیا تھا کہ آصفہ بھٹو زرداری ملتان کے جلسہ عام میں میری نمائندگی اور پی ڈی ایم قیادت کا استقبال کریں گی۔

جلسے کے لیے اپوزیشن کی تیاری

وہی دوسری جانب اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پی ڈی ایم بھی حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لیے تیار نظر آئی اور ان کے کارکنان کی ملتان آمد کا سلسلہ جاری ہے۔

پاکستان پیپلزپارٹی نے اپنے جیالوں کو گیلانی ہاؤس پہنچنے کی ہدایت کی گئی تھی جبکہ آصفہ بھٹو زرداری بھی گیلانی ہاؤس سے ریلی کی صورت میں جلسہ گاہ روانہ ہوئیں۔

اسی طرح پی ڈی ایم کے صدر اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن بھی جامعہ قاسم العلوم سے جلسہ گاہ روانہ ہوئے۔

مزید یہ کہ مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا استقبال چنگی نمبر 9 پر کیا گیا۔

علاوہ ازیں پیپلزپارٹی کے کارکنان نے گیلانی ہاؤس سے نشتر ہسپتال کی طرف آنے والے راستے پر لگے کنٹینر کو ہٹا دیا، اس موقع پر پی پی کارکنان کے ہمراہ علی موسیٰ گیلانی بھی موجود تھے۔

علی قاسم گیلانی کی ضمانت منظور ہوگئی، علی حیدر

دوسری جانب یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے علی حیدر گیلانی نے بتایا کہ لاہور ہائیکورٹ ملتان بینچ نے گرفتار علی قاسم گیلانی کی ضمانت منظور کرلی۔

علی حیدر گیلانی نے بتایا کہ 16 ایم پی او کے تحت بننے والا مقدمہ خارج کردیا گیا، جبکہ روبکار بھی ڈسٹرکٹ جیل بھیج دی گئی۔

ادھر علی موسیٰ گیلانی نے سوہنی دھرتی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے بتایا تھا کہ جلسہ اور ریلی ہر ہال میں ہوگی۔

موسیٰ گیلانی کا کہنا تھا کہ یوسف رضا گیلانی کے مہمان سندھ سے آرہے ہیں ہم ان پر آنچ نہیں آنے دیں گے۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

عوام نے فیصلہ دے دیا، سلیکٹڈ کو اب جانا ہوگا، آصفہ بھٹو زرداری

پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی ہمشیرہ آصفہ بھٹو زرداری اپنے سیاسی کیریئر کا آغاز کرتے ہوئے کہا ہے کہ آج عوام نے حکومت کے خلاف فیصلہ دے دیا، اب حکومت کو جانا ہوگا ملتان میں گھنٹہ گھر چوک پر پی ڈی ایم کے جلسے میں پیپلز پارٹی […]
asifa-zardari-wSD