یونیورسٹی کی طالبہ کی پراسرار موت کی تحقیقات شروع

ویب ڈیسک
0 0
Read Time:2 Minute, 13 Second

راولپنڈی: نفسیات کی طالبہ ایمن شفیق کے ساتھیوں کی جانب سے ان کی پُراسرار موت پر شکوک و شبہات ظاہر کرنے کے بعد ، صادق آباد پولیس نے ابتدائی رپورٹ درج کرکے ان کے شوہر اور ساس کے بیانات قلمبند کرلیے۔

واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سٹی پولیس افسر (سی پی او) محمد احسن یونس نے شکریال میں واقع نجی یونیورسٹی کی بی ایس نفسیات کی طالبہ کی موت کی فوری تحقیقات کا حکم دیا۔

سی پی او کی ہدایت کے بعد اسٹیشن ہاؤس افسر (ایس ایچ او) صادق آباد طاہر ریحان نے تحقیقات کا آغاز کیا اور امکان ہے کہ موت کی اصل وجہ معلوم کرنے کے لیے عدالت میں طالبہ کے پوسٹ مارٹم کی درخواست دائر کی جائے۔

ان کی ایک ساتھی طالبہ لاریب نیازی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کی گئی ایک ٹوئٹ میں کہا تھا کہ ‘ ہم آپ (سی پی او) سے درخواست کرتے ہیں کہ اس کیس کو جلد از جلد ایف آئی آر کے اندراج کے لیے متعلقہ پولیس تھانے بھیجا جائے’،

لاریب نیازی نے کہا کہ ‘ یہ حادثہ نیو شکریال (صادق آباد) میں پیش آیا تھا’۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ واقعہ 4 دسمبر، 2020 کو راجا ٹاؤن میں واقع ایمن شفیق کے سسرالیوں کے گھر میں پیش آیا تھا۔

لاریب نیازی نے کہا کہ وہ (ایمن شفیق) اپنی شادی سے خوش نہیں تھیں اور اکثر اپنی دوستوں سے اس معاملے گفتگو کرتی تھیں۔

طالبہ کی تدفین کے بعد ان کی دوستوں نے سوشل میڈیا پر مذکورہ معاملہ اٹھایا اور سینئر پولیس افسران کی توجہ اس طرگ مبذول کروائی اور تحقیقات کا مطالبہ کیا۔

ہدیداران کے مطابق صادق آباد پولیس نے طالبہ کے شوہر شرجیل الرحمن ستی اور ان کی والدہ ، جو کوٹلی ستیاں کی رہائشی ہیں، کو طلب کیا اور ان کے بیانات قلمبند کیے۔

انہوں نے دعوی کیا کہ ایمن شفیق کی موت فطری تھی اور یہ الزامات بے بنیاد ہیں۔

پولیس نے اپنے روزنامچے میں اس واقعے کے حوالے سے رپورٹ درج کرلی ہے۔

دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ جاں بحق ہونے والی خاتون اور ان کا شوہر آپس میں کزنز تھے اور ایک گھر میں رہتے تھے۔

خاتون کے والد کے انتقال کے بعد وہ اپنی والدہ کے ساتھ اسی گھر میں رہتی تھیں۔

پولیس کے مطابق عدالت میں دونوں فریقین کی طلبی کے سمن کے ساتھ لاش کی قبر کشائی کے لیے درخواست دائر کی گئی ہے۔

عدالت سے اجازت ملنے کے بعد خاتون کے پوسٹ مارٹم کے لیے ان کی قبر کشائی کی جائے گی۔

پولیس ترجمان نے کہا کہ خاتون کی موت کے بعد ان کے اہلخانہ نے تدفین کی تھی اور کسی نے بھی اس وقت پولیس کو آگاہ نہیں کیا تھا۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

ڈیرہ اسمٰعیل خان میں فائرنگ سے صحافی قتل

صوبہ خیبرپختونخوا کے ضلع ڈیرہ اسمٰعیل خان میں نامعلوم افراد نے گھر میں گھس کر ایک صحافی کو قتل کردیا۔ پولیس کے مطابق واقعہ پیر کی رات کو پیش آیا جبکہ واقعے کی فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) بھی درج کرلی گئی۔ تھانہ کینٹ میں متوفی کے کزن کی […]
journalist-wSD