جی-7 اجلاس میں شرکت کیلئے جانے والے دو بھارتی سفارتکار وائرس کا شکار

ویب ڈیسک
0 0
Read Time:2 Minute, 40 Second

لندن میں سات وزرائے خارجہ کے گروپ کا اجلاس جی-7 بھی کورونا وائرس سے متاثر ہو گیا اور ہندوستانی وفد کے دو اراکین وائرس کا شکار ہو گئے ہیں۔

خبر رساں ایجنسی رائٹرز کے مطابق ہندوستانی وزیر خارجہ اور ان کی ٹیم نے کہا ہے کہ وفد کے دو اراکین وائرس کا شکار ہونے کے بعد آئسولیشن میں چلے گئے ہیں۔

برطانیہ تین روزہ اجلاس کی میزبانی کر رہا ہے جو دو سالوں میں اس طرز کا پہلا جی-7 اجلاس ہے، جس میں روبرو بیٹھ کر سفارتکاری کے دوبارہ آغاز اور مغرب کو چین اور روس سے ملنے والی دھمکیوں کے خلاف متحدہ محاذ بنانے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔

دنیا میں کووڈ-19 کی سب سے ابتر صورتحال سامنا کرنے والا ملک بھارت بھی مہمان کی حیثیت سے جی-7 اجلاس میں شریک ہے اور اسے منگل اور بدھ کو ہونے والے تمام اجلاسوں میں شرکت کرنا تھی۔

ہندوستان کے وزیر خارجہ سبرامنیم جے شنکر نے ٹوئٹر پر کہا کہ ہمیں کووڈ-19 کیسز کی زد میں آنے کے حوالے سے گزشتہ شام آگاہ کیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ زیادہ سے زیادہ احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کے ساتھ ساتھ دوسروں کا خیال رکھنے کے لیے ہم نے اجلاس میں ورچوئل بنیادوں پر شرکت کا فیصلہ کیا ہے، آج بھی ہم جی-7 اجلاس میں اسی طرح شریک ہوں گے۔

یہ اجلاس جون میں ایک دیہی انگریزی ریزورٹ میں ہونے والے اہم جی 7 سربراہی اجلاس کی تیاری ہے جس میں امریکی صدر جو بائیڈن اور دیگر عالمی رہنما شرکت کریں گے۔

ایک برطانوی عہدیدار نے ان دو مثبت کسیز کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ پورا ہندوستانی وفد خود سے آئسولیشن میں چلا گیا ہے، برطانوی قوانین کے تحت انہیں 10 دن آئسولیشن میں گزارنے ہوں گے۔

ہندوستانی وفد ابھی تک لنکاسٹر ہاؤس میں اجلاس کے مرکزی مقام میں شریک نہیں ہوا لہٰذا بدھ کے روز طے شدہ ملاقاتیں منصوبہ بندی کے مطابق ہی انجام پائیں گی۔

برطانوی وزیر خارجہ ڈومینک ریب نے جی 7 کے دیگر اراکین کو اجلاس میں آمد خوش آمدید کہا۔

برطانیہ کے ایک سینئر سفارت کار نے کہا کہ ہمیں انتہائی افسوس ہے کہ جے شنکر آج ذاتی طور پر اجلاس میں شرکت کرنے سے قاصر ہوں گے، یہی وجہ ہے کہ ہم نے روزانہ کی بنیاد پر ٹیسٹنگ اور کووڈ پروٹوکول عملدرآمد جاری رکھا ہوا ہے۔

منگل کے روز لنکاسٹر ہاؤس کے عظیم الشان کانفرنس روم کی تصاویر سے سفارتکاری کی حقیقت عیاں ہو جاتی ہے کیونکہ تمام وفود کو ایک پلاسٹک اسکرین سے علیحدہ کیا گیا ہے جبکہ وزرا سے دو میٹر کے فاصلے پر ان کے اہلخانہ کی تصویر رکھی گئی ہے۔

جے شنکر کی منگل کے روز برطانوی وزیر داخلہ پریتی پٹیل سے ملتے ہوئے تصویر لی گئی لیکن پریتی کو آئسولیشن میں نہیں رہنا ہو گا کیونکہ یہ ملاقات طے شدہ اصولوں کے مطابق ہوئی تھی، دونوں نے تصویر میں ماسک پہنے ہوئے تھے۔

ہندوستان جی 7 کا رکن نہیں ہے لیکن برطانیہ نے آسٹریلیا، جنوبی افریقہ اور جنوبی کوریا کے ساتھ بھارت کو بھی اس ہفتے کے اجلاس میں مدعو کیا تھا۔

لندن میں ہندوستانی ہائی کمیشن سے اس حوالے سے ردعمل لینے کے لیے رابطہ کیا گیا لیکن انہوں نے کسی تبصرے سے گریز کیا۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

افریقی خاتون کے ہاں بیک وقت 9 بچوں کی پیدائش

کیا آپ کو معلوم ہے کہ ایک وقت میں سب سے زیادہ بچے جنم دینے (جو سب زندہ بھی بچ گئے) کا ریکارڈ کس خاتون کے پاس ہے ؟ اگر نہیں تو جان لیں کہ وہ نادیہ سلیمان نامی ایک امریکی یہودی خاتون ہیں جنھوں نے جنوری 2009 میں 8 […]
SDM