کورونا وبا: ملک میں 3 لاکھ 955 کیسز، 2 لاکھ 88 ہزار سے زائد صحتیاب

ویب ڈیسک

دنیا بھر میں کروڑوں لوگوں کو متاثر اور لاکھوں اموات کا سبب بننے والے مہلک کورونا وائرس کے پاکستان میں اثرات ہر گزرتے دن کے ساتھ کم ہورہے ہیں اور اب تک مجموعی کیسز میں سے 96 فیصد صحتیاب ہوچکے ہیں۔

0 0
Read Time:3 Minute, 56 Second

دنیا بھر میں کروڑوں لوگوں کو متاثر اور لاکھوں اموات کا سبب بننے والے مہلک کورونا وائرس کے پاکستان میں اثرات ہر گزرتے دن کے ساتھ کم ہورہے ہیں اور اب تک مجموعی کیسز میں سے 96 فیصد صحتیاب ہوچکے ہیں۔

ملک میں مجموعی کیسز کی تعداد 3 لاکھ 836 ہے جس میں سے 2 لاکھ 88 ہزار 536 صحتیاب ہوئے ہیں جبکہ 6 ہزار 373 کا انتقال ہوا ہے۔

آج 12 ستمبر کی صبح تک ملک میں کورونا وائرس کے مزید 274 مریضوں اور 2 اموات کی تصدیق ہوئی جبکہ 330 افراد شفایاب بھی ہوگئے، جس میں بلوچستان کے گزشتہ روز کے 119 کیسز بھی شامل تھے۔

اگر اس وائرس کی بات کریں تو اس کا پہلا کیس 26 فروری 2020 کو کراچی میں رپورٹ ہوا تھا جس کے بعد یہ پورے ملک میں پھیل گیا۔

ابتدا میں اس وائرس کے کیسز کی تعداد کم تھی تاہم بعد ازاں اس میں اضافہ ہونا شروع ہوا اور مئی اور جون میں کافی کیسز رپورٹ ہوئے۔

جون میں تو صورتحال یہاں تک پہنچ گئی تھی کہ یومیہ 6 ہزار سے زائد کیسز اور 100 سے زائد اموات رپورٹ ہونے لگی تھیں، مزید یہ ہسپتالوں پر دباؤ بڑھنے کی اطلاعات بھی سامنے آئیں تھیں۔

تاہم جولائی میں وائرس کے کیسز میں کمی آنے کا سلسلہ شروع ہوا جو اگست میں کچھ بہتر ہوا اور پھر ستمبر میں اس میں مزید بہتری دیکھی جارہی ہے۔

اسی صورتحال کو دیکھتے ہوئے ملک میں 6 ماہ سے بند تعلیمی اداروں کو بھی 15 ستمبر سے مرحلہ وار کھولنے کا فیصلہ کیا گیا۔

آج 12 ستمبر کو ملک میں کورونا وائرس کے کیسز اور اموات کی صورتحال کچھ اس طرح ہے۔

پنجاب

ملک میں آبادی کے حساب سے سب سے بڑے صوبے پنجاب میں کورونا وائرس کے مزید 69 مریض اور ایک موت کی تصدیق ہوئی۔

سرکاری پورٹل کے مطابق صوبے میں ان نئے مریضوں کے بعد کیسز کی مجموعی تعداد 97 ہزار 602 ہوگئی۔

اس کے علاوہ ایک فرد کے انتقال کرجانے سے اموات کی مجموعی تعداد 2 ہزار 215 تک پہنچ گئی۔

اسلام آباد

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں کورونا وائرس مزید 30 افراد کو متاثر کرگیا۔

ان نئے مریضوں کے بعد وفاقی دارالحکومت میں کیسز کی مجموعی تعداد 15 ہزار 862 تک پہنچ گئی۔

گلگت بلتستان

ملک کے کم متاثر علاقوں میں سے ایک گگلت بلتستان میں کورونا کی عالمی وبا کے 33 نئے کیسز اور ایک موت کی تصدیق ہوئی۔

سرکاری پورٹل کے مطابق ان 33 نئے مریضوں نے کیسز کی مجموعی تعداد کو 3 ہزار 164 تک پہنچا دیا۔

اس کے علاوہ ایک فرد کا انتقال مجموعی تعداد کو 74 تک لے گیا۔

آزاد کشمیر

پاکستان کے سب سے کم متاثر حصے آزاد کشمیر میں کورونا وائرس کے 23 نئے مریض سامنے آئے۔

آزاد کشمیر میں ان نئے مریضوں کے بعد کیسز کی مجموعی تعداد 2 ہزار 389 ہوگئی۔

صحتیاب افراد

ملک میں صحتیاب افراد کی تعداد میں بھی اضافہ دیکھا جارہا ہے اور گزشتہ 24 گھںٹوں میں 330 مریض شفایاب ہوگئے۔

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق مزید 330 مریضوں کے صحتیاب ہونے کے بعد مجموعی تعداد 2 لاکھ 88 ہزار 536 تک پہنچ گئی۔

مجموعی صورتحال

ملک میں عالمی وبا کے کیسز، اموات اور صحتیاب افراد کی تعداد میں اضافے کے بعد اگر مجموعی صورتحال پر نظر ڈالیں تو وہ کچھ اس طرح ہے:

مصدقہ کیسز: 300955

اموات: 6373

صحتیاب: 288536

فعال کیسز: 6046

ملک میں اس وائرس سے سب سے زیادہ متاثر صوبے سندھ اور پنجاب ہیں، صوبہ سندھ میں متاثرین کی مجموعی تعداد ایک لاکھ 31 ہزار 675 ہے جبکہ پنجاب میں یہ تعداد 97 ہزار 602 تک پہنچ چکی ہے۔

صوبہ خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس سے 36 ہزار 862 افراد متاثر ہوچکے ہیں جبکہ صوبہ بلوچستان میں وبا میں مبتلا ہونے والوں کی تعداد 13 ہزار 401 ہے۔

علاوہ ازیں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 15 ہزار 862، گلگت بلتستان میں 3 ہزار 164 اور کشمیر میں 2 ہزار 389 افراد عالمی وبا کا شکار ہوچکے ہیں۔

ملک میں اموات کی صورتحال

سندھ: 2440

پنجاب: 2215

خیبرپختونخوا: 1256

بلوچستان: 145

اسلام آباد: 178

آزاد کشمیر: 65

گلگت بلتستان: 74

پاکستان میں کورونا کیسز اور اموات

خیال رہے کہ ملک میں کورونا وائرس کا پہلا کیس 26 فروری 2020 کو کراچی میں سامنے آیا تھا اور 25 مارچ تک کیسز کی تعداد ایک ہزار تک پہنچ چکی تھی۔

تاہم اس کے بعد مذکورہ وائرس نے پاکستان میں اپنے پنجے گاڑنا شروع کیے تاہم بعد ازاں صورتحال بہتری کی جانب واپس گامزن ہوئی اور اب تک 3 لاکھ سے زائد افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں، جبکہ اموات 6 ہزار سے زائد ہیں۔

ملک میں کورونا وائرس کے پہلے کیس سے لے کر اب تک کیا صورتحال رہی اور کس روز کتنے کیسز اور اموات سامنے آئیں؟ مکمل تفصیل جاننے کے لیے کلک کریں۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

نیوی کا کام ملک کا دفاع کرنا ہے، کلب بنانے کا کردار قانون میں کہاں لکھا ہے؟، عدالت

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے پاکستان نیوی سیلنگ کلب کی تعمیر کے خلاف کیس میں کہا ہے کہ نیوی کا رول (کردار) ملک کا دفاع کرنا ہے، سیلنگ یا کلب بنانے کا کردار قانون میں کہاں لکھا ہے۔
islambad-high-court-wSD