آسٹریلیا میں کورونا وائرس کے 25 ہزار کیسز جبکہ ٹیسٹ میں کمی پر حکام کو تشویش جاری

ویب ڈیسک

آسٹریلیا میں کووڈ-19 کے کیسز کی تعداد 25 ہزار سے تجاوز کرگئی ہے، جبکہ شہریوں کی جانب سے ٹیسٹنگ سے گریز پر حکام نے تشویش کا اظہار کر دیا۔

0 0
Read Time:2 Minute, 21 Second

آسٹریلیا میں کووڈ-19 کے کیسز کی تعداد 25 ہزار سے تجاوز کرگئی ہے، جبکہ شہریوں کی جانب سے ٹیسٹنگ سے گریز پر حکام نے تشویش کا اظہار کر دیا۔

خبرایجنسی رائٹرز کے مطابق آسٹریلیا میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 151 نئے کیسز رپورٹ ہوئے اورگزشتہ روز کے مقابلے میں 121 کیسز کا اضافہ ہوا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سب سے زیادہ کیسز وکٹوریا اور نیو ساؤتھ ویلز میں سامنے آئے ہیں۔.

قبل ازیں آسٹریلیا میں رواں ماہ کے آغاز میں روزانہ 700 سے زائد کیسز رپورٹ ہورہے تھے اور پھر اس میں کمی آئی تھی لیکن حکام نے کووڈ-19 کے ٹیسٹ کے لیے شہریوں کے عدم تعاون پر تشویش کا اظہار کیا۔

کینبرا میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیف نرسنگ اور مڈوائفری افسر الیسن مک ملن نے کہا کہ ‘ہم دیکھ رہے ہیں کہ ٹیسٹ کی تعداد میں کمی آرہی ہے اس لیے شہریوں سے گزارش ہے کہ اگر آپ کو علامات ہیں تو برائے مہربانی ٹیسٹ کروادیں’۔

آسٹریلیا میں کورونا وائرس کے کیسز کی مجموعی تعداد بڑھ کر 25 ہزار 67 ہوچکی ہے جبکہ 525 ہلاکتیں ہوئیں۔

رپورٹ کے مطابق آسٹریلیا کا دوسرا بڑے شہر اور وکٹوریا کے دارالحکومت میلبورن وائرس کا مرکز ہے جہاں 6 ہفتوں کو سخت لاک ڈاؤن نافذ ہے اور شہریوں کو ضروری کام کے علاوہ گھروں تک محدود رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

میلبورن میں شہریوں کی نقل و حرکت محدود ہونے کے علاوہ کاروباری سرگرمیوں کو معطل کردیا گیا ہے اور رات کا کرفیو نافذ ہے۔

آسٹریلیا کے وزیراعظم ڈینیل اینڈریوز کوشش کررہے ہیں کہ وکٹوریا میں ریاستی پارلیمنٹ سے ایمرجنسی کے نفاذ میں مزید ایک سال تک توسیع کے لیے قانون سازی ہو جس کے تحت اس دوران ایمرجنسی میں توسیع یا پابندیوں کے دوبارہ نفاذ کی اجازت ہوگی۔

نیوزی لینڈ میں ٹیسٹنگ میں اضافہ

آسٹریلیا کے پڑوسی ملک نیوزی لینڈ میں حکومت نے ٹیسٹنگ کے عمل کو مزید تیز کرنے کا اعلان کردیا ہے جبکہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 7 کیسز شامل ہوگئے ہیں۔

نیوزی لینڈ کے وزیرصحت کرس ہوپکنز کا کہنا تھا کہ اگلے ایک ہفتے کے دوران 70 ہزار ٹیسٹ کرنے کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ‘ہم اس وقت تک آرام سے نہیں بیٹھیں گے جب اس لہر پر قابو نہیں پائیں اور ہمیں جب ضرورت ہو شہریوں کے ٹیسٹ کرنے کی ضرورت ہے’۔

ویلنگٹن میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے رواں ماہ کے اوائل میں آکلینڈ میں سامنے آنے کیسز کا حوالہ دیا، جس کے بعد نیوزی لینڈ میں کئی مہینوں تک مقامی سطح پر وائرس کی منتقلی پر قابو پانے کا سلسلہ ختم ہوگیا تھا۔

وزیراعظم جسینڈا آردن نے گزشتہ روز اعلان کیا تھا کہ آکلینڈ میں ہفتے کے اختتام لاک ڈاؤن میں توسیع کی گئی ہے اور ملک بھر میں عوامی ٹرانسپورٹ میں ماسک پہننا لازمی قرار دیا تھا۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

ساؤتھ ہیمپٹن ٹیسٹ کے پانچویں دن کا کھیل بارش سے متاثر

انگلینڈ کے خلاف سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میچ میں اننگز کے خطرے سے دوچار پاکستانی ٹیم کی مدد کو بارش آ گئی ہے اور میچ کے پانچویں بارش کے باعث اب تک کھیل شروع نہیں ہو سکا۔
Southampton-Test-Wsd